تازہ ترین  

تیرے شکوے جو بہاروں سے شجر کرتے ہیں ۔۔۔ اے خزاں کچھ تو غلط ہے وہ اگر کرتے ہیں
    |     4 months ago     |    شعر و شاعری
تیرے شکوے جو بہاروں سے شجر کرتے ہیں
اے خزاں کچھ تو غلط ہے وہ اگر کرتے ہیں

مصلحت ہوتی ہے کیا آو بتاوں تم کو
نوکری اچھی نہیں لگتی مگر کرتے ہیں

موجزن عشق کا دریا ہے تری آنکھوں میں
ہم وہ عاشق جو اسے ڈوب کے سر کرتے ہیں

ہو اگر پختہ یقیں ذاتِ خدا پر تو پھر
تین سو تیرہ فتوحاتِ بدر کرتے ہیں

جی حضوری میں گزرتی ہے حیاتی جن کی
زیست ایسوں کی کوئی اور بسر کرتے ہیں

جو کنارے پہ کھڑے ڈوب گئے تھے سرمد
تذکرہ ان کا سمندر سے بھنور کرتے ہیں





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved