تازہ ترین  

ماں کشمیر تو جنت ہے نا۔۔۔۔۔
    |     6 months ago     |    افسانہ / کہانی
"نہیں۔۔۔۔۔۔۔ یہ مسور کی دال۔۔۔۔۔۔۔ میں نہیں کھاؤنگی" ساریہ نے منہ بناتے ہوے کہا۔۔
"شکر کرو مسور کی دال مل رہی۔۔۔۔۔اور اب تمہیں یہی کھانا پڑے گی۔۔۔۔ یہ ہاسٹل ہے۔۔۔۔۔ کوئی اپنا گھر نہیں۔۔۔۔۔" ریمل نے عندیہ دیا۔۔۔۔
"ہاسٹل نہ ہوا۔۔۔۔۔ جیل ہوگئی۔۔۔۔۔ اور میں نہیں کھانے والی یہ بحیرہ عرب کے شوربے والی دال۔۔۔" ساریہ نے دال کی شان میں قصیدہ پڑھا
"شکر کرو کھانا مل رہا۔۔۔۔ ورنہ کتنے ہی ایسے ہیں جن کو کئی کئی دن بعد کھانا نصیب ہوتا" ریمل نے حقیقت بیان کرتے ہوے کہا۔۔۔
"بس۔۔۔ اس وقت میں کوئی لیکچر سننے کے موڈ میں نہیں۔۔۔۔ میری آنتیں کب سے قل ھواللہ پڑھ رہی ہیں۔۔۔۔ اور ہاں۔۔۔۔ میں کے ایف سی کا زنگر آرڈر کرنے لگی۔۔۔ تم نے بھی کھانا ہے تو بتاؤ۔۔۔ تمہارا بھی آرڈر کر دوں۔۔۔ بلکہ نہیں۔۔۔۔۔ تم تو میس کی شاہی دال ہی تناول فرماؤ۔۔۔" اور ساریہ کے ایف سی کا نمبر ڈائل کرنے لگی۔۔۔
پندرہ منٹ بعد ساریہ پیکٹ پکڑے لاؤنج میں داخل ہوئی۔۔۔۔ کے ایف سی کی ڈلیوری آچکی تھی۔۔۔اس نے پیکٹ کو بے دردی سے پھاڑ کر برگر نکالا اور کھانے لگی۔۔۔۔ واؤؤ۔۔۔۔۔ مزے کا ہے۔۔۔۔۔۔ برگر پر تبصرے کے دوران اس نے دوسرے ہاتھ سے ریموٹ پکڑا اور ٹی وی آن کیا۔۔۔۔۔

ماں کشمیر تو جنت ہے نا،
جنت میں طوفان ہے کیوں؟؟
حق تو حیوانوں کے بھی ہیں،
درد میں پھر انسان ہے کیوں؟؟

یوم کشمیر کے حوالے سے چار نمبر چینل پر ایک معصوم بچہ دلگداز آواز میں ترانہ پڑھ رہا تھا۔۔۔۔ بیک گراؤنڈ میں نہتے کشمیریوں پر ڈھاۓ گئے مظالم کی داستان تصویری جھلکیوں کی صورت میں چل رہی تھی۔۔۔۔
اس خطے کے باسی جس خطے کو بانئی پاکستان نے وطن کی شہہ رگ قرار دیا تھا۔۔۔۔۔
"ساریہ۔۔۔۔ ساریہ کہاں ہو یارـ۔۔۔۔ یہ تم اکیلے اکیلے زنگر ہڑپ۔۔۔۔۔"
ریمل اسے ڈھونڈتے ہوے ٹی وی لاؤنج آئ تھی کہ اس نے زنگر کا پیکٹ دیکھا اور پھر اچانک اس کی نظر اس کے چہرے پر پڑی تھی اور اس کی بات ادھوری رہ گئی۔۔۔۔ وہ مسور کی دال پر منہ بنانے والی لڑکی اب آنسو بہا رہی تھی۔۔۔۔
اس نے سکرین پر نظریں دوڑائیں۔۔۔۔۔
درد کسے کہتے ہیں۔۔۔۔۔ یہ تو کوئی ان سے جا کر دریافت کرے۔۔۔۔ اور یہ سوچتے ہوے ریمل لاؤنج سے باہر نکل آئی۔۔۔





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved