تازہ ترین  

حیا اتار کے پھینکی ضمیر بیچ دیا۔۔۔(غزل)
    |     5 months ago     |    شعر و شاعری

حیا اتار کے پھینکی ضمیر بیچ دیا
کہ خاک زاد نے اپنا خمیر بیچ دیا

نڈھال کر دیا فاقوں نے اس کے بچوں کو
مریدِ خاص نے لقمے پہ پیر بیچ دیا

لگا رہا تھا جو قیمت بہت مناسب تھی
سو ہم نے اپنا دلِ بینظیر بیچ دیا

وہ تھا تو طفل، سیاست کمال کی اس نے
کبیر تھام کے رکھا صغیر بیچ دیا

عجیب جنگ لڑی ہے مرے مخالف نے
کمان توڑ کے پھینکی تو تیر بیچ دیا

پھٹا لباس تو اندر سے شہ نکل آیا
فضول تھا سو لباسِ فقیر بیچ دیا

عمر وہ "میں" بھی تو کہنے کا حق نہیں رکھتا
کہ اس نے ذات کا رقبہ کثیر بیچ دیا

عابد عمر


(عابد عمر ایک مشاعرے میں کلام سناتے ہوئے۔۔۔۔معروف شاعر یعقوب پرواز صاحب بھی سٹیج پر موجود ہیں)۔





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved