تازہ ترین  

پہلی محبت ۔۔۔(افسانہ)
    |     5 months ago     |    افسانہ / کہانی
کلرکہار جھیل کے کنارے میں صبح سویرے چہل قدمی کر رہا تھا کہ اچانک فون کی گھنٹی بجی۔امی جان کا فون تھا۔انھوں نے بتایا کہ تمہاری خالہ کی طیبعت بہت خراب ہے۔میں ایک ہفتہ گاوں ہی رہوں گی۔اگر چھیٹاں ہوئی تو تم بھی گاوں ہی آجانا۔
اگلے دن میں بڑی مشکل سے 10بجے کے قریب گاوں پہنچا۔خالہ "نوراں"چارپائی پر لیٹی ہوئی تھیں جبکہ امی جان لکڑی کی کرسی پر بیٹھی ہوئی تھیں۔

میں ابھی خالہ کو مل کر بیٹھنے ہی لگا تھا کہ امی بولی
"بیٹا زہری کو نہیں ملوگے"؟
"امی جان زہری نظر ہی نہیں آرہی"،میں نے کہا
امی نے مجھے درخت کے سایے میں بندھی گائے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا وہ رہی زہری
"زہری لالے نوں پانی دے" خالہ نوراں نے گھانستے ہوئے کہا
تھوڑی دیر بعد زہری ایک ہاتھ میں پلاسٹک کا جک جبکہ دوسرے میں مٹی کا گلاس تھامے میرے پاس آگئی۔ میری خالہ کی یہ بیٹی اگر میرے پاس دو منٹ اور کھڑی رہتی تو مجھے یقینا قہہ آجاتی۔
دوپہر کے کھانے پر جب میں نے زہری کو دیکھا تو وہ کسی پری سے کم نہیں لگ رہی تھی۔رنگ تو تھا ہی اس کا سفید اور پھر اس نے سرخ جوڑا بھی پہن رکھا تھا۔شاید گوبر کی بد بو اس ہری سے اب بھی آرہی ہوگی۔
رات مچھر کی وجہ سے مجھے نیند نہیں آرہی تھی تو زہری نے میری چارپائی چھت پر بچھا دی۔کافی دیر زہری میرے پاس چھت پر بیٹھی رہی۔ اس کی سادہ اور مصعوم باتیں میرے دل اس کی طرف بری طرح گھیسٹ رہی تھیں۔میں نے باتوں ہی باتوں میں زہری سے پوچھا
"زہری تیرا کوئی بوائے فرینڈ تو ہوگا؟"
"اے بھائی!تو نے کیسی بات کری ہے۔سارا دن میں گوبر میں ہاتھ ماروں۔بھلا ایسے میں ہمرا کون دوست بنے ہے۔"
مختصر وقفے کے بعد بولی
"ہاں تو!تو شہری بابو ہے۔ تیری تو کوئی نہ کوئی سہیلی ہوے گی"
"ہاں زہرا"
میرے منہ سے ابھی یہی لفظ نکلے تھے کہ زہری خوشی سے جھوم اٹھی۔
"نہیں زہری آپ نہیں،وہ چچا عدن کی بیٹی" زہرا"جو اب اس دنیا میں نہیں ۔۔آنسووں نے مجھے اپنا جملہ مکمل ہی نہیں کرنے دیا تھا کہ زہری میرا تھامتے ہوئے بولی
"زہرا چلی گئی تو کیا ہوا زہری تو ہے نا"





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved