تازہ ترین  

یہ دنیا نے بھی عجیب رسم باندھی ہے
    |     2 months ago     |    شعر و شاعری
یہ دنیا نے بھی عجیب رسم باندھی ہے
مار کے کہتی ہے کاش اور جی لیتا

جو زندہ ہیں تو قدم قدم کانٹے بچھاتی ہے
گر مر جائیں تو پھولوں کے ہار پہناتی ہے

مجھے ڈسنے والے تھے میرے اپنے ہی
وگرنہ غیروں میں کہاں اتنا دم تھا

خوشیوں کا موسم آیا تو ضرور تھا
ہم ستم رسیدوں کو مگر راس نہ آیا

جلتا رہا دل اسی آرزو میں بس
کہ کاش رہتا تو روبرو سدا میرے

یہ تو کرم تھاکہ کھڑا رہا تن تنہا رقیبوں میں
وگرنہ بندہ ناچیز میں کہاں اتنا دم تھا






Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved