فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز کے زیراہتمام الفنان کالج میںفری میڈیکل کیمپ کا انعقاد
 
ڈسکہ(امین رضا مغل)فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز کے زیراہتمام فری میڈیکل کیمپ کا انعقاد ، ماہر ڈاکٹرز نے مریضوں کا فری چیک اپ کیا اور ادویات بھی دی گئیں ۔ دکھی انسانیت کی خدمت کیلئے کام کرنے والی ملک گیر تنظیم فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز کے زیراہتمام مقامی الفنان کالج میں فری میڈیکل کیمپ لگایا گیا جس میں ماہر ڈاکٹرز ،فارماسسٹس،فزیو تھراپسٹ نے مریضوں کا فری چیک اپ کیا جبکہ ادویات بھی مفت دی گئیں ۔سینئر گائنا کالوجسٹ سرگنگا رام ہسپتال لاہور ڈاکٹر یاسمین احسان، ڈاکٹر محمد ثوبان ،ڈاکٹر تحسین ریاض ،فزیو تھراپسٹ اسپیشلسٹ ڈاکٹر عنبر شبیر، ڈاکٹر منزہ اروا میڈیکل کیمپ کوآرڈینیٹر ڈاکٹر رائے وقاص سمیت فیکلٹی آف فارمیسی یوسی پی سے والنٹیئرز عبداللہ فاروق اور مبین احسان نے شرکت کی ۔اس موقع پرچیئرمین فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز ڈاکٹر عرفان بشیر اور ڈاکٹر یاسمین احسان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ FYRایک فلاحی تنظیم ہے جس کے ذریعے ہم من


فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز کے زیراہتمام الفنان کالج میںفری میڈیکل کیمپ کا انعقاد
 
ڈسکہ(امین رضا مغل)فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز کے زیراہتمام فری میڈیکل کیمپ کا انعقاد ، ماہر ڈاکٹرز نے مریضوں کا فری چیک اپ کیا اور ادویات بھی دی گئیں ۔ دکھی انسانیت کی خدمت کیلئے کام کرنے والی ملک گیر تنظیم فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز کے زیراہتمام مقامی الفنان کالج میں فری میڈیکل کیمپ لگایا گیا جس میں ماہر ڈاکٹرز ،فارماسسٹس،فزیو تھراپسٹ نے مریضوں کا فری چیک اپ کیا جبکہ ادویات بھی مفت دی گئیں ۔سینئر گائنا کالوجسٹ سرگنگا رام ہسپتال لاہور ڈاکٹر یاسمین احسان، ڈاکٹر محمد ثوبان ،ڈاکٹر تحسین ریاض ،فزیو تھراپسٹ اسپیشلسٹ ڈاکٹر عنبر شبیر، ڈاکٹر منزہ اروا میڈیکل کیمپ کوآرڈینیٹر ڈاکٹر رائے وقاص سمیت فیکلٹی آف فارمیسی یوسی پی سے والنٹیئرز عبداللہ فاروق اور مبین احسان نے شرکت کی ۔اس موقع پرچیئرمین فاﺅنڈیشن فار ینگ ریسرچرز ڈاکٹر عرفان بشیر اور ڈاکٹر یاسمین احسان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ FYRایک فلاحی تنظیم ہے جس کے ذریعے ہم من


ایک باہمت لڑکی کی کہانی
 
وہ اپنے والدین اور پانچ بہن بھائیوں کے ساتھ صوبہ پنجاب کے دور دراز علاقے میں ہنسی خوشی زندگی گزار رہی تھی۔ اپنے بہن بھائیوں میں سب سے بڑی تھی اور اس کے والد دوسرے شہروں سے سامان لاکر یہاں بیچا کرتے تھے اور ان کا کاروبار بہت اچھا چل رہا تھا۔زندگی کے شب و روز یونہی گزررہے تھے کہ ایک دن اس کی والدہ کی طبیعت اچانک خراب ہوگئی۔مقامی ڈاکٹر سے چند دن علاج کرانے کے بعد بھی جب وہ بہتر ہونے کے بجائے مزید بیمار ہوتی گئیں تو ڈاکٹر کے کہنے پر اس کی والدہ کو بڑے ہسپتال لے جایا گیاجہاں وہ تین چار دن ایڈمٹ رہنے کے بعد اپنے خالق حقیقی کے پاس چلی گئیں۔ والدہ کیا گئیں اُس بچی پر ذمہ داریوں کا کوہ ہمالیہ آن پڑا۔گھر میں بڑی ہونے کے ناطے اسے گھر بھی سنبھالنا تھا‘گھر کے کام کاج بھی کرنے تھے‘بہن بھائیوں کا خیال رکھنا اور ان کو پڑھانا بھی اس کے کھاتے میں آگیا اور سب سے بڑھ کر اپنے دوسالہ بھائی کوپالنا بھی اب بارہ سالہ بچی کے ذمہ تھا۔ ان سب چیزوں کو دیکھ


مجھ سے وفا کے جذبوں کو مارا نہیں گیا
 
مجھ سے وفا کے جذبوں کو مارا نہیں گیاآنکھوں سے میری عکس تمہارا نہیں گیادھندلا گیا جو نقش نکھارا نہیں گیاآنکھوں میں حسرتوں کو ابھارا نہیں گیانظروں سے تیری گر کے گوارا نہ تھی حیاتاس راستے سے خود کو گزارا نہیں گیادن کا قرار، نیند تو شب کی مری لٹی اس معرکے میں کچھ بھی تمہارا نہیں گیاجب سے ترا فراق ہے اس دل میں شعلہ زندیوار و در کو مجھ سے سنوارا نہیں گیامانگی نہیں ہے میں نے کبھی بھیک میں وفا مجھ سے کبھی ضمیر کو ہارا نہیں گیاچھپ جائیں جس کی تہہ میں کئی بد نما نقوشوہ روپ مجھ سے شہر میں دھارا نہیں گیازریؔاب پھر کسی کی تمنا نہیں رہیپھر دل میں کوئی شخص اتارا نہیں گیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔شاعرہ: ہاجرہ نور زریاب آکولہ مہاراشٹر انڈیا


ہر روتی عورت سچی ہو یہ ضروری نہیں، فاطمہ کے ساتھ شادی بارے محسن عباس حیدر نے حیران کن بات کر دی۔۔۔تفصیلات جانیے
 
 اسلام آباد (آپکی بات ڈاٹ کام) اداکار محسن عباس حیدر نے کہا ہے کہ کسی کی عزت اچھالنے کا قائل نہیں ہوں‘بیوی نے کیچڑ اچھالا، اچھالا،ہر روتی عورت سچی ہو یہ ضروری نہیں،فاطمہ کیساتھ شادی کرنے میں جلدی کی۔ اداکار محسن عباس حیدر نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کی بیوی نے ان پر کیچڑ اچھالا ہے اور وہ اس کو صاف کرنے کیلئے تیار ہیں کیونکہ وہ کسی کی بھی عزت اچھالنے کے قائل نہیں ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ یہ ضروری نہیں ہےکہ ہر روتی ہوئی عورت سچی ہو اور ہم ہمیشہ عورت کارڈ ہی کیوں کھیلتے ہیں۔جاوید چوہدری ویب کے مطابق ایک سوال پر ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے فاطمہ سہیل کیساتھ شادی کرنے میں جلدی کی، شادی کے کچھ ماہ بعد ہی ہم دونوں کو یہ احساس ہونا شروع ہوا کہ ہم میں ذہنی ہم آہنگی نہیں ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جو تصاویر فاطمہ نے سوشل میڈیا میں شیئیر کی ہیں وہ ایک سال پہلے کی ہیں جب وہ سیڑھیوں سے گری تھیں۔ انہوں نے اس بات کی بھی تردید کی کہ ان


کیا آپ کے سر اور گردن میں درد رہتا ہے؟ تو اس کی ایک وجہ یہ بھی ہو سکتی ہے۔
 
اگر آپ کے سر اور گردن میں اکثر درد رہتا ہے تو گھبرانے کی ضرورت نہیں ۔ امریکا میں طبی تحقیق کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ چیونگم کو مسلسل چبانے کی عادت آپ کی تکلیف کی وجہ ہوتی ہے۔ویسے تو چیونگم کا استعمال ذہنی تناو میں کمی لاسکتا ہے مگر مسلسل اپنے جبڑوں کو چلاتے رہنا گردن اور سردرد کا باعث بن جاتا ہے۔تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ چیونگم کو بہت دیر تک چبانا یا مسلسل استعمال کرنا ان حصوں پر دباوڈالتا ہے جہاں جبڑے کھوپڑی سے ملتے ہیں۔ تحقیق کے مطابق مسلز پر یہ دباو سر اور گردن پر اثر انداز ہوتا ہے۔ ویب رپورٹ  کے مطابق یوٹی ساوتھ ویسٹرن میڈٰکل سینٹر کی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ مسلسل چیونگم کو چباتے رہنا جبڑوں کو تھکا دیتا ہے اور مسلز میں تھکاوٹ اور درد پیدا ہوتا ہے اور وہی آگے بڑھکر سر اور گردن میں منتقل ہوجاتا ہے۔


اکیلا سرفراز ہی ورلڈ کپ ناکامی کا ذمہ دار نہیں ہے بلکہ۔۔۔۔۔۔پاکستانی آل راونڈر سہیل تنویر نے بڑی بات کہہ دی۔۔۔تفصیلات جانیے
 
لاہور (آپکی بات ڈاٹ کام) پاکستان کرکٹ ٹیم کے آل راﺅنڈر سہیل تنویر کا کہنا ہے کہ آئی سی سی کرکٹ ورلڈکپ 2019ء میں قومی ٹیم کی ناقص کارکردگی کا ذمہ دار اکیلے سرفراز احمد کو نہیں ٹھہرایا جا سکتا۔تفصیلات کے مطابق سہیل تنویر نے کہا کہ میرے خیال سے ورلڈکپ میں قومی ٹیم کی ناقص کارکردگی پر صرف کپتان سرفراز احمد کو ذمہ دار ٹھہرانا غلط ہے کیونکہ ہار ، جیت بحیثیت ٹیم ہوتی ہے۔لہذا یہ کہنا سراسر غلط ہوگا کہ سرفراز احمد ورلڈ کپ میں ناقص کارکردگی کا ذمہ دار ہے۔ ہار ہو یا جیت ذمہ دار پوری ٹیم ہوتی ہے اور ہر گز یہ نہیں کہا جاسکتا کہ ناقص کارکردگی کا ذمہ دار کپتان یا کوچ ہے۔ پاکستانی آل راونڈر سہیل تنویر کا کہنا ہے کہ میں مانتا ہوں کہ سلیکشن کمیٹی کی جانب سے حتمی ٹیم کے متعلق غلط فیصلے کیے گئے مگر اس کا مطلب یہ ہر گز نہیں کہ اکیلا کپتان یا کوچ ٹیم کی ناقص کارکردگی کا ذمہ دار ٹھہرایا جائے۔ سہیل تنویر کا مزید کہنا ہے کہ پاکستانی ٹیم کی کارکردگی شروع س



اہم خبریں

مقبول ترین

تعارف / انٹرویو

آج کے کالم و مضامین

اشتہارات
فیس بک پیج

آپکی بات ڈاٹ کام آپ کی اپنی ویب سائٹ ہے ، ہمارے ساتھ رہنے کا شکریہ
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2019 apkibat. All Rights Reserved