ماں ۔ ۔ ۔ تحریر : عرقِ حیات
 
دنیا کا وہ واحد لفظ کہ جس کو ادا کرتے ہوۓ زبان میں مٹھاس کا احساس ہوتا ہے۔ ۔"ماں" جس کے پاس ہونے سے سکون اور محبت کا احساس ہوتا ہے۔ ۔"ماں" رب کائنات کا بنایا ہوا وہ واحد رشتہ ہے کہ جو بنا کسی لالچ اور غرض کہ ہے۔ اپنی خواہشات کو دبا کر اپنی اولاد کی ہر خواہش پوری کرنا یہ ایک ماں ہی کر سکتی ہے۔ اپنی اولاد کے لیے سخت دھوپ میں ایک ٹھنڈا سایہ ہے۔ خود گیلے بستر پر سو سکتی ہے لیکن اپنی اولاد کو خشک اور آرام دہ جگہ پر ہی سلاتی ہے۔ ماں ہی ہے جو خود بھوک برداشت کر لیتی ہے لیکن اپنی اولاد کو بھوکا سونے نہیں دیتی۔ دنیا جہان کے دکھ تکالیف برداشت کر سکتی ہے لیکن اپنی اولاد کو تکلیف میں نہیں دیکھ سکتی اپنی اولاد کو ہر پل خوش دیکھنے کے لیے غموں کے آگے چٹان بن کر کھڑی ہو جاتی ہے۔ ۔"ماں" دنیا کا سب سے عظیم رشتہ ماں کی شان ماں کی عظمت خدا نے اس کے قدموں تلے جنت رکھ کہ بیان فرمائی ہے۔ چاہے جو بھی حالات کیوں نہ ہوں ماں کو اپنی اولاد سے بڑھ کر کچھ بھی پیار


ملک میں سیاسی کشمکش کا فائدہ کون اٹھائے گا۔؟
 
میری یہ تحریر پڑھنے والوں کو اچھی طرح معلوم ہے کہ پاکستان میں ایک طویل عرصے سے دو بڑی سیاسی جماعتیں یکے بعددیگرے حکومت کرتی چلی آرہی ہیں کبھی پاکستان مسلم لیگ ن تو کبھی پاکستان پیپلزپارٹی لیکن 2018کے انتخابات کے بعد ایک تیسری جماعت پاکستان تحریک انصاف ان دونوں بڑی جماعتوں کو پیچھے دھکیلتے ہوئے اقتدار میں آگئی ،جس کے بارے میں اس وقت کئی سوالات اٹھائے جارہے ہیں یہ سوالات پہلے تو کچھ اس قسم کے تھے کہ تحریک انصاف آئی ہے یا لائی گئی ہے ؟ جبکہ اب موجودہ عوامی یا تجزیاتی لوگوں کے سوالات کچھ یوں ہیں کہ تحریک انصاف کی موجودہ حکومت اپنی مدت پوری کرپائے گی یا نہیں ؟ کیونکہ جس انداز میں تحریک انصاف نے الیکشن سے قبل عوام میں جو امید کے دیئے جلائے تھے وہ اقتدار ملنے کے بعد سے لیکر اب تک اپنی لو کو کھونے لگے ہیں اور ایسا محسوس ہوتاہے کہ زراسی تیز ہواچلی تو کہیں یہ چراغ بجھ ہی نہ جائیں ،خیر ان تمام تر صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ اس ملک کی دو


دیار غیر سے
 
صحافت کے اعلی معیار اور صحافیوں کی فلاح وبہبود کے لئے کوششیں جاری رکھی جایں گی۔۔ سرپرست اعلی پریس کلب آف پاکستان اعجاز افضل شیخ کا اجلاس سے خطاب۔  مانچسٹر (شکیل قمر) اعجاز افضل شیخ نے کہا پے کہ پریس کلب آف پاکستان یوکے و یورپ اپنے اعلی مقاصد اور نصب العین پر کار بند رہتے ہوئے صحافت کے معیار اور صحافیوں کی فلاح و بہبود کے سلسلے میں اپنی کوششیں جاری رکھے گی۔وہ پریس کلب کے ماہانہ اجلاس سے خطاب کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ غیر صحافی افراد کے گٹھ جوڑ سے نام نہاد کلب بنا کر ہمارے مفادات کو نقصاں پہنچانے کی کوشش کر رہے ہیں ،ہم بہت جلد ان کو قانون اور انصاف کے کٹہرے میں لاکر بے نقاب کردیں گے اور اس طرح ان کی جھوٹی صحافت کا پول کھل جائے گا۔ پریس کلب کے اجلاس کی صدارت چودھری محمد عارف پندھیر نے کی جبکہ اعجاز افضل شیخ،شکیل قمر،کاظم رضا،راجہ واجد حسین،شوکت قریشی،ارشد اعوان اور دیگر اجلاس میں شریک ہوئے ،اجلاس کے بعد صدر پریس کلب مح


ماں ۔ ۔ ۔ تحریر : عرقِ حیات
 
دنیا کا وہ واحد لفظ کہ جس کو ادا کرتے ہوۓ زبان میں مٹھاس کا احساس ہوتا ہے۔ ۔"ماں" جس کے پاس ہونے سے سکون اور محبت کا احساس ہوتا ہے۔ ۔"ماں" رب کائنات کا بنایا ہوا وہ واحد رشتہ ہے کہ جو بنا کسی لالچ اور غرض کہ ہے۔ اپنی خواہشات کو دبا کر اپنی اولاد کی ہر خواہش پوری کرنا یہ ایک ماں ہی کر سکتی ہے۔ اپنی اولاد کے لیے سخت دھوپ میں ایک ٹھنڈا سایہ ہے۔ خود گیلے بستر پر سو سکتی ہے لیکن اپنی اولاد کو خشک اور آرام دہ جگہ پر ہی سلاتی ہے۔ ماں ہی ہے جو خود بھوک برداشت کر لیتی ہے لیکن اپنی اولاد کو بھوکا سونے نہیں دیتی۔ دنیا جہان کے دکھ تکالیف برداشت کر سکتی ہے لیکن اپنی اولاد کو تکلیف میں نہیں دیکھ سکتی اپنی اولاد کو ہر پل خوش دیکھنے کے لیے غموں کے آگے چٹان بن کر کھڑی ہو جاتی ہے۔ ۔"ماں" دنیا کا سب سے عظیم رشتہ ماں کی شان ماں کی عظمت خدا نے اس کے قدموں تلے جنت رکھ کہ بیان فرمائی ہے۔ چاہے جو بھی حالات کیوں نہ ہوں ماں کو اپنی اولاد سے بڑھ کر کچھ بھی پیار


فیروز ناطق خسرو کی غزل کا ایک رنگ
 
دل میں کھٹکتی اور ضمیرکی روشن صدا کو دوسروں تک پہنچانے کے لیے کئی طریقے اس جہان میں متعارف ہیں. ہر ایک اپنے اپنے دائرہ کار میں مصروف عمل ہے .چنداں کی مقبولیت کا ستارہ روشن اور کئ سیاہی کے مزے میں مست ہیں. مگر شاعری ایک ایسی چیز ہے کہ اس جہت سے اپنے مقصد کی تشہیر کرنے والوں نے دنیا میں منزل مقصود کو بہت جلد پایا. انقلابات کے برپا کرنے میں, جہاد میں مجاہدین کی صفوں میں جوش پیدا کرنے میں, گمراہ کو راہ راست پہ لانے میں اور زبان ولسان کو تادیر قائم رکھنے میں شاعری کا اہم کردار رہا ہے اور پھر اس کی مختلف اصناف میں غزل ایک ایسی صنف ہے کہ جس نے عوام الناس میں مقبولیت اختیار کر لی ہے وجہ شاید یہ ہے کہ اس کے ابیات میں تسلسل نہیں ہوتا انہیں یاد رکھنا آسان ہوتا ہے اور ایک کامل مضمون ایک بیت میں درج ہوتا ہے .بہت کم غزلیں ایسی ملتی ہیں جن کے تمام ابیات میں تسلسل پایا جاتا ہے.غزل نے بہت سارے مدارات میں سفر طے کرکے اتنی وسعت پیدا کر لی ہے کہ ہر موضوع ک


گھی شکر اور مکھن لگانا (طنزومزاح)
 
لسی،مکھن اور گھی شکر کا پنجاب میں اتنا ہی احترام کیا جاتا ہے جتنا کہ ہندو دھرم میں گائو ماتا یا دھرتی ماتا کا کیا جاتا ہے،ہمارے ہاں مکھن کھانے اور’’ لگانے‘‘کے علاوہ دیہی علاقوں میں بچوں کا نام بھی’’ مکھن ‘‘رکھنے کے کام آتاہے۔مکھن نام رکھنے سے شادی سے قبل تو کوئی مسئلہ درپیش نہیں آتا مگر شادی کے بعد یہ نام اس لئے مسئلہ کا باعث بن جاتا کہ ہمارے ہاں اکثر خواتین اپنے خاوند کو نام سے نہیں پکارتیں،چونکہ ہمارے ہاں دیہی اور سیدھی سادھی خواتین براہ راست خاوند کا نام لینا معیوب خیال کرتیں ہیں تو کبھی لسی میں مکھن کو دیکھ لیتیں تو نام لینے کی بجائے کہتی ہیں کہ دیکھو لسی میں منے کے ابا(مکھن) تیر رہے ہیں۔یا لسی میں سے گڑیا کے ابو(مکھن) کو نکال کر گرم گرم روٹی پر رکھ کے دیتی ہوں،یا پھر گڈو کے ابا(مکھن) کو سالن میں ڈال کر کھانے سے بچے صحت مند رہتے ہیں،اور اگر حاملہ خواتین ننھی کے ابا(مکھن) کو کھائیں تو بچہ توانا اور گورا چٹا پیدا ہوتا ہے


آفتاب احمدکی شاعری :چندتاثرات
 
;674668;ay ;76;ewisنے ;3465; hope for ;80;oetry;3939; میں شاعری کو جادو کی دختر نیک اخترخیال کیا ہے اور سائنس اور شاعری کا موازنہ کرتے ہوئے انھیں ایک دوسرے کے لیے معاندانہ رویوں کا حامل ٹھہرایا ہے،کیوں کہ جادو اس کائنات کی شخصی ترجمانی ہے اور سائنس غیر شخصی عقلی تشریح ہے ۔ ایسا زمانہ جہاں سائنس اور ٹیکنالوجی تیزی سے انسانی زندگی میں داخل ہو رہی ہوں ،وہاں شاعری کے اثرات کمزور پڑجاتے ہیں اور چیزیں احساس سے زیادہ عقل اور منطق کے تابع ہونا شروع ہو جاتی ہیں ،لیکن میرا خیال ہے کہ ایسا ضروری نہیں ۔ انسان چاہے کسی بھی دور میں زندہ ہو وہ اپنے بنیادی فطری تقاضوں سے رو گردانی نہیں کر سکتا ،احساس اس کا فطری ورثہ ہے اور تخلیقیت اُس کا اظہار ۔ سائنسی افکار ہو ں یا سیاسی نظریات شاعری میں اتنی طاقت موجود ہوتی ہے کہ وہ انھیں خود میں جذب کر کے شعورِ عام کا حصہ بنا دے ۔ دورِ حا ضر جسے سائبر عہد کا نام دیا جا سکتا ہے ، میں ٹیکنالوجی اور ابلاغ کے تیز ترین ذراءع نے جو معجز


ڈائری سے مکالمہ : کپاس کا سیزن ۔۔۔ تحریر : مدیحہ ریاض
 
ڈئیر ڈائری آج میں تمہیں زندگی کی ایک اٹل حقیقت بتانے لگی ہوں اور حقیقت یہ ہے کہ ہم جس چیز کے پیچھے بھاگتے ہیں وہ ہے پیسہ ۔ہر انسان سونے چاندی کا چمچ لے کر پیدا نہیں ہوتا اور ہر انسان غربت کی چکی میں بھی نہیں پستا۔ پیسہ انسان کی بنیادی ضرورت ہے اور پیسہ کے بغیر انسانی زندگی کا تصور ہی ناممکن ہے۔ زندگی بسر کرنے کرنے کے لئے پیسے کی کی اہمیت اپنی جگہ مسلط و قائم ہے ۔ ڈئیر ڈائری تمہیں تو معلوم ہے کہ پچھلے دنوں کپاس کا سیزن عروج پر تھا ۔چھوٹا بڑا غرض ہر کوئی اس سیزن سے بھرپور استفادہ حاصل کرنے میں مصروف تھا اور مصروف بھی کیوں نہ ہوتا کیونکہ اسی سیزن کے بدولت ہی غریب گھروں میں دو وقت کا چولہا جلتا ہے تو دوسری طرف متوسط طبقے کے گھروں میں جہیز بنتا ہے۔ مائیں صبح منہ اندھیرے گھر سے نکلتی ہیں تو شام ڈھلے گھر واپس لوٹتی ہیں ۔صرف اور صرف پیٹ کی خاطر ،اولاد کی خاطر ۔اچھے دنوں کی آس انھیں بوڑھا ہونے نہیں دیتی ۔ڈئیر ڈائری یہ کپاس کا سیزن؂ کنواری


آر کے پروڈکشنز اینڈ فیشن سٹوڈیو کے آفس کی اوپنگ کی افتتاحی تقریب
 
لاہور ( عارف اے نجمی سے) باری سٹوڈیو میں آر کے پروڈکشنز اینڈ فیشن سٹوڈیو کے آفس کی اوپنگ کی افتتاحی تقریب اور منچلے بینڈ اور آر کے پروڈکیشنز کے بینر تلے بننے والی فلم ’’محبت کے انگارے ‘‘کی تقریب رونمائی منعقد ہوئی، تقریب میں پاکستان فلم انڈسٹری کے مشہور فلم سٹار ولی بخاری،سلطان بلا، فلم سٹار دیا ملکہ اور دیگر شوبز ستاروں کے ساتھ ساتھ پاکستان مسلم لیگ ن کلچر ونگ کے صدر محمد عتیق ملک ، آر کے پروڈکیشن کے ڈائریکٹر خرم شہزاد، جنرل مینجر زہرا بیگ کلک میگزین کے ایڈیٹر مختار احمد، رائل ٹی وی کے وسیم احسن، ڈاکٹر سلمان، ڈائریکٹر ممتاز حسین، رائٹر ناصر ادیب پروڈیوسر جانی نرالا سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے شرکت کی ،تقریب کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے آر کے پروڈکیشنز کے ڈائریکٹر خرم شہزاد نے کہا ہماری پروڈکیشنز کا موقف صرف نیو چہروں کو متعارف کروانا ہے جن میں کچھ کرنے کا جنون ہے لیکن وہ کسی وجہ سے آگے ن


ورلڈ ٹی ۔ بی ڈے ۔۔۔ تحریر : ڈاکٹر میاں عدیل عارف
 
دنیا میں ہر سال 24مار چ کو ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے زیر اہتمام ٹی ۔ بی ڈے منایا جاتا ہے ۔ اس دن کو منانے کا مقصد لوگوں میں بیماری کے بارے میں آگاہی فراہم کرنا ہے ۔ اس سال سے یہ دن It's Time For Action. It's Time To End TB. کے تھیم کے تحت پوری دنیا میں منایا جا رہا ہے ۔عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق ہر دن دنیا میں تقریباً 4000ہزار افراد اس بیماری کا شکار بن جاتے ہیں ۔ 2008ء میں عالمی ادارہ صحت کی ایک رپورٹ کے مطابق دنیا کی آبادی کا تیسرا حصہّ اس بیماری کا شکار ہے ۔ پاکستان ٹی۔بی سے متاثر ہ ممالک کی فہرست میں چھٹے نمبر پر ہے ۔ پاکستان میں ہر سال 5لاکھ نئے مریض سامنے آتے ہیں ۔ اور سالانہ تقریباً 70ہزار افراداس مرض سے لڑتے ہوئے اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں ۔ 24مارچ 1882ء کو رابرٹ کوچ نے پہلی دفعہ ٹی ۔بی کے بیکٹریا کو الگ کیا اور اسے ایک متعدی بیماری قرار دیا ۔ 1946ء مین پہلی دفعہ ٹی ۔ بی کے خلاف کام کرنے والی دوائی Streptomycin تیار کی گئی ۔ ٹی ۔ بی (Tubercuiosis) کوسل اور


فری لانسنگ کیا ہے اور بطور فری لانسر گھر بیٹھے کس طرح پیسے کمائے جاسکتے ہیں ؟
 
What is freelancing? How to make money as a home based freelancer. آپ نے فری لانسنگ کا لفظ یقینا کئی بار سنا ہوگا اور ہوسکتا ہے آپ میں سے بہت سے احباب بطور فری لانسر کام کر رہے ہوں گے لیکن جو احباب اس حوالے سے جاننے کے خواہشمند ہیں میری یہ تحریر ان کے لیے تحفہ ہے۔ آپکی بات ڈاٹ کام کی جانب سے ایک نیا سلسلہ ( آئیے گھر بیٹھے بغیر انویسٹمنٹ کے پیسے کمائیں) Let's earn money at home with no investment. شروع کیا جارہا ہے اور یہ اس سلسلے کی پہلی تحریر ہے۔ اس سلسلے کو شروع کرنے کا مقصد تیز ترین انٹرنیٹ کے دور میں گھر بیٹھے پیسے کمانے کے لیے ٹپس فراہم کرنا یے۔ سوشل میڈیا پر روزانہ کئی کئی گھنٹے ضائع کرنے کی بجائے اس وقت کو قیمتی بنانے کے لیے یہ سلسلہ شروع کیا جارہا ہے۔ اور اس سلسلے میں بھرپور کوشش ہوگی کہ ہفتے میں تین یا چار تحریریں ضرور شیئر کی جائیں تاکہ دلچسپی رکھنے والے احباب اس سے فائدہ اٹھا سکیں اور مرد و خواتین گھر بیٹھے ہر مہینے معقول آمدنی کماسکیں۔ انتہائی افسوس کے ساتھ کہنا چاہ


ڈسٹرکٹ کرکٹ چیمپئن شپ کا آغاز ، چیمپئن شپ کا افتتاح ڈسٹر کٹ سپورٹس آفیسر طار ق محمود نے کیا
 
لودھراں ( جمال خان سے ) ڈسٹرکٹ کرکٹ چیمپئن شپ کا آغاز ۔ تفصیل کے مطابق ڈسٹرکٹ کرکٹ چیمپئن شپ کا افتتاح ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر طارق محمود نے کیا ۔ ان کے ہمراہ فرینڈز گروپ کے چیئرمین ظفر خان ، ہاشم علی ، علاؤالدین یوسف ، سید تنویر عاشق بخاری اور جمشید مجید بھی ساتھ تھے ۔ ڈی ایس او طارق محمود نے بیٹ کے ساتھ شارٹ کھیل کر چیمپئن شپ کا افتتاح کیا۔ چیمپئن شپ کے افتتاحی دو میچز کے فیصلے ۔ رائزنگ سٹار اور داتا ہجویری کا میچ نیو اسٹیڈیم لودھراں میں کھیلا گیا ۔ داتا ہجویری نے پہلے کھیلتے ہوئے 212رنز بنائے ۔حاجی ناصر نواز نے تین وکٹ حاصل کیں ۔ جواب میں رائزنگ سٹار نے ہدف بآسانی بنا لیا ۔ حاجی ناصر نواز نے 80،سید عمران شاہ بخاری نے40اور شان نے 30رنز بنائے ۔ حاجی ناصر مین آف دی میچ قرار ۔ دوسرا میچ پرنس کرکٹ کلب اور ڈیسنٹ کرکٹ کلب کے درمیان ترین کرکٹ گراؤنڈ میں کھیلا گیا ۔ پرنس کرکٹ کلب نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا ۔ پرنس کرکٹ کلب نے 233


فیس بک پیج

مقبول ترین

تعارف / انٹرویو

آج کے کالم و مضامین

اہم خبریں

نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

ویڈیوز
اشتہارات

آپکی بات ڈاٹ کام آپ کی اپنی ویب سائٹ ہے ، ہمارے ساتھ رہنے کا شکریہ
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved